سوموار، 15 دسمبر، 2014

آیئے کچن گارڈننگ شروع تو کریں !


اکثر احباب پوچھتے ہیں کہ ہم بھی کچن گارڈننگ شروع کرنا چاہتے ہیں مگر سمجھ ہی نہیں آتی کیا کریں ، کچھ دوست تو کہیں نہ کہیں سے مٹی گملے اکٹھے کرتے ہیں اور کام شروع کر دیتے ہیں مگر کچھ اگتا ہی نہیں ، دلبرداشتہ ہوکر چھوڑ دیتے ہیں ،ایک بہن نے شکوہ کیا آپ صرف لکھ سکتے ہیں ، کبھی کچھ اگایا بھی ہے کہ نہیں ؟ خوشی ہوتی ہے کہ الحمد اللہ میرے چھوٹے سے کام کی وجہ سے پاکستان کے عام لوگوں میں کچن گارڈننگ کا شعور پیدا ہورہا ہے ،میں خود ابتدا میں ایسے ہی حالات کا شکار رہا ہوں ،سو اپنے تجربات کی روشنی میں کچھ مفید مشورے دینا چاہتا ہوں کہ آپ کچن گارڈننگ شروع تو کریں۔ویسے میں خود ابھی تک محترم طارق تنویر کے مشوروں کا محتاج ہوں ،انہوں نے قدم قدم پر راہنمائی فرمائی جس کی وجہ سے یہ سب کچھ لکھنے کا حوصلہ ہو سکا۔

ہفتہ، 6 دسمبر، 2014

قادر بخش فارمز ، جہان رنگ و بو

فیصل آباد شہر سے شیخوپورہ روڈ پر جاتے ہوئے گٹ والا پولیس پوسٹ کراس کرتے ہوئے آدھ کلومیٹر مزید آگے جائیں تو آپ کو بائیں طرف ایک قادر بخش فارمز کا بورڈ لگا ہوا نظر آتا ہے، مین روڈ سے نظر آنے والے اس بورڈ کی سمت چلیں تو چند گز کے فاصلہ پر آپ کو ایک نئی دنیا آباد نظر آئے گی۔معروف کچن گارڈن ایکسپرٹ،باغبان اور  لینڈ سکیپنگ کے ماہر طارق تنویر نے یہاں ایک علیحدہ ہی دنیا بسا رکھی ہے،دنیا کے جہاں کے انتہائی قیمتی اور نایاب پودے اور ایسا پر سکون اور رومانٹک ماحول جو انسان کو اپنے ہی سحر میں گرفتار کرلیتا ہے اور سونے پر سہاگہ طارق تنویر اور ان کے والد محترم جناب چوہدری محمد اسلم کی آنے والوں کے ساتھ محبت اور تواضع ،طارق تنویر سے میرا تعارف فیس بک پر بنے پودوں اور 

سوموار، 22 ستمبر، 2014

آیئے گل کلغہ سے اپنے گھر کو سجائیں

گل کلغہ کو موسم سرما کی آمد سے قبل موسمی پھول کے طور پر باغات اور گھریلو باغیچوں میں لگایا جاتا ہے اسے انگریزی میںCelosia یا Cockc'somb بھی کہا جاتا ہے۔ اس کی پنیری اگست سے ستمبر کے دوران منتقل کی جاتی ہے ۔اس لئے جلدی کیجئے اور اس کی پنیری لگا لیجئے۔اس پر مرغ کی کلغی کی طرح کے زرد، نارنجی اور گلابی رنگ کے نرم و ملائم اور مخمل جیسے خوبصورت پھول آتے ہیں جو موسم خزاں کے اختتام تک اپنا جوبن دکھاتے رہتے ہیں۔ گل کلغہ ایک سدا بہار پودا ہے لیکن اسے ہمیشہ موسمی پھول کے طور پر ہی لگایا جاتا ہے۔ یہ ایک سخت جان اور نہایت تیزی سے بڑھنے اور پھلنے پھولنے والا پودا ہے۔ اس کے پودوں کو عام طور پر کیاریوں میں لگایا جاتا ہے، لیکن گھریلو پودے کے طور پر گملوں میں لگا یا جا سکتا ہے ۔                          گل کلغہ کی پنیری کو کیاریوں اور گملوں وغیرہ میں منتقل کرنے کے بعد اچھی طرح مناسب اور درمیانی مقدار میں پانی لگاتے رہنا چاہئے تاہم پھول آجانے کے بعد پانی کی فراہمی نسبتاً کم کردیں۔ دیگر پودوں کی طرح گل کلغہ کے پھولدار پودوں کیلئے بہت زیادہ یا بہت کم پانی کی مقدار

اتوار، 21 ستمبر، 2014

کچن گارڈننگ ، موسم سرما کی سبزیوں کی کاشت

ستمبر اکتوبر کے مہینے موسم سرماکی سبزیوں کی کاشت کے مہینے ہیں بلکہ اکثر جگہوں پر پنیریوں کی کاشت شروع ہو چکی ہے،کچن گارڈننگ کے لئے ابھی بھی آپ اپنے گھر میں موسم سرما کی سبزیوں کی کاشت کر سکتے ہیں۔پنجاب کی حکومت نے کچن گارڈننگ کے فروغ کے لئے کافی کام کیا ہے ، گرمیوں اور سردیوں کی سبزیوں کی کاشت کے لئے بیجوں کا پیکٹ زراعت کے دفاتر سے صرف پچاس روپے میں مل رہا ہے بلکہ گزشتہ برس اسے سکولوں میں مفت بھی تقسیم کروایا گیا

ہفتہ، 20 ستمبر، 2014

پنجاب میں کچن گارڈننگ کے تحت موسم سرما کی سبزیات کی کاشت کے لئے بیجوں کی فراہمی شروع کر دی گئی ہے

نظامت زرعی اطلاعات پنجاب کے ترجمان کے مطابق پنجاب میں کچن گارڈننگ کے تحت موسم سرما کی سبزیات کی کاشت کے لئے بیجوں کی فراہمی شروع کر دی گئی ہے۔ گھروں میں سبزیوں کی کاشت کو فروغ دینے کے لئے موسم سرما کی آٹھ سبزیات جن میں گاجر، مولی، شلجم، پالک، دھنیا، سلاد، میتھی اور سرسوں کے بیج ایک ہی پیکٹ میں دستیاب ہوں گے اور پیکٹ کی قیمت صرف50 روپے مقرر کی گئی ہے۔ ترجمان نے کہا کہ یہ بیج 5 مرلہ جگہ پر کاشت کرنے کے لیے کافی ہے۔ یہ پیکٹ پنجاب بھر میں محکمہ زراعت کے دفاتر سے دستیاب ہیں ۔موسم سرما کی سبزیات کی کاشت یکم ستمبر سے31 اکتوبر تک کی جا سکتی ہے۔

جمعرات، 5 جون، 2014

اپنے باغیچہ میں منی آبشار اور فوارے بنائیے

آپ نے اکثر گھروں کے باغیچوں یا ان ڈور پلانٹس میں بنی چھوٹی چھوٹی آبشاریں یا فوارے دیکھے ہوں ، بعض اوقات ان خوبصور ب روشنیاں بھی لگی ہوتی ہیں ،یہ
آبشاریں یا فوارے ماحول میں خوبصورتی پیدا کرتے ہیں اور گھر میں آنے والے مہمانوں پر آپ کے جمالیاتی ذوق کا خوبصورت تاثر بھی چھوڑتے ہیں،اگر آپ چاہیں تو تھوڑی سے محنت سے اپنے باغیچہ یا ان ڈور پلانٹس کے درمیان اسے بنا کر اپنے گھر کی خوبصورتی ہیں اضافہ کر سکتے ہیں ۔آج میں آپ کو آسانی سے انہیں بنانے اور سجانے کا طریقہ بتانے جا رہا ہوں جس کے زریعے آپ انہیں اپنے گھر پر تیار کر سکتے ہیں اور پھر جب کوئی چیز خود آپ کے ہاتھوں کی تیار کردہ ہو گی تو تو آپ گھر میں آنے والے مہمانوں کو فخر سے اپنی کارکرگی دکھا بھی

سوموار، 12 مئی، 2014

گرمیوں میں بھی اپنے گھروں کو پھولوں سے سجایئے

پاکستان میں موسم بہار اپنی پوری بہار اور خوبصورتی دکھا کر رخصت ہو رہا ہے،ہر طرف پھول ہی پھول قدرت کی بڑائی بیان کرتے ہوئے دکھائی دیتے ہیں ،پھولوں کے بھی اتنے رنگ کہ آپ گننا بھی چاہیں تو گن نہ سکیں،جونہی مئی کا مہینہ شروع ہوتا ہے تو یہ پھول مرجھانے شروع ہوجاتے ہیں تو ہر طرف پھیلی رنگوں کی بہار جب نظر نہیں آتی تو عجیب سی اداسی پھیل جاتی ہے۔جون جولائی اور اگست میں شدید گرمی اور حبس ہر چیز کو جھلسا کہ رکھ دیتا ہے تو ایسے میں دل چاہتا ہے کہ ارد گرد پھول ہوں جن کی خوبصورت آنکھوں کو بھلی لگے اور ٹھنڈک کا احساس پیدا ہو،ایک خاتون کی کال آئی کہ گرمیوں میں تو باغیچوں میں بھی جانے کو دل نہیں کرتا ،کہیں پھول نظر نہیں آتے، واقعی میدانی علاقوں میں ایسی صورت حال کچھ زیادہ ہی محسوس ہوتی ہے، میں نے سوچا اپنے دوستوں سے کچھ ایسے پودے شیئر کروں جو گرمیوں اپنے پھولوں اور خوشبو کی وجہ سے ماحول میں تازگی اور خوشبو پھیلا کر ہمیں خوش رکھ سکیں۔

جمعہ، 28 مارچ، 2014

سٹیویا ، ایک جادو اثرپلانٹ

سٹیویا اپنے میٹھے پتوں کی وجہ سے دنیا بھر میں مشہور ہے۔یہ قدرتی طورپر پیراگوئے اور برازیل میں پایا جاتا ہے لیکن اب اس کی کاشت دینا بھر میں شروع ہوگئی ہے۔ اس کے پتے چینی سے 15گنا زیادہ میٹھے ہوتے ہیں اور اس کے عرق میں چینی سے 200سے 300گنا زیادہ میٹھا ہوتا ہے۔اس میں نشاشتہ اور حرارے نہ ہونے کے برابر ہیں جس کی وجہ سے یہ شوگر کے مریضوں کے لیے مفید ہے اور یہ خون میں شوگر کی مقدار اوربلڈ پریشر کو بھی کم کرتاہے ۔سٹیویا نامی شوگر پلانٹ سے چائے، مشروبات کو میٹھا کرکے چینی کی سالانہ طلب میں 6سے 8لاکھ ٹن کمی لائی جاسکتی ہے۔

اتوار، 16 مارچ، 2014

کچن گارڈننگ ،موسم گرما کی سبزیوں کی کاشت

 مارچ موسم گرما کی سبزیوں کی کاشت کا مہینہ ہے بلکہ اکثر جگہوں پر کاشت ہو بھی چکی ہے،کچن گارڈننگ کے لئے ابھی بھی آپ اپنے گھر میں موسم گرما کی سبزیوں کی کاشت کر سکتے ہیں۔پنجاب کی حکومت نے کچن گارڈننگ کے فروغ کے لئے کافی کام کیا ہے ، گرمیوں اور سردیوں کی سبزیوں کی کاشت کے لئے بیجوں کا پیکٹ زراعت کے دفاتر سے صرف پچاس روپے میں مل جاتا ہے بلکہ گزشتہ برس اسے سکولوں میں مفت بھی تقسیم کروایا گیا تھا۔ایک پیکٹ پانچ مرلہ کے قطعہ اراضی کے لئے کافی ہے یعنی اگر آ پ کے گھر  کے آس پاس  صرف پانچ مرلہ  یا ا س سے کم  زمین کا کوئی ٹکڑا ہے تو صرف مناسب دیکھ بال کرکے

سوموار، 3 مارچ، 2014

رنگ بہاراں ، آپ کے گھر میں

پاکستان میں بہار کے موسم کا احساس ہی دلفریب ہے،بہار کا نام ذہن میں آتے ہی رنگا رنگ اور خوبصورت پھلوں اور سبزے کا لازوال تصور آنکھوں کے سامنے آجاتا ہے،اسلام آباد ، لاہور ،کراچی،فیصل آباد سمیت تمام چھوٹے بڑے شہروں میں چشن بہاراں اور رنگ بہاراں کے نام سے پھولوں کی نمائشیں لگائی جاتی ہیں۔بڑے شہروں میں آج کل سڑکوں کے کناروں اور ڈیوائڈرز میں پھول اور پودے لگائے جارہے ہیں اس لئے وہاں تو سڑکوں پر آئی بہار نے عجب سماں باندھ رکھا ہے۔ سوکھی کھاس میں اگے عام سے پھول بھی اس اس انداز میں کھلے ہوئے ہیں کہ انسان قدرت کی اس حسین تخلیق کے رنگوں میں کھو جاتا ہے ۔چارسو پھیلے ہوئے ہر رنگ کے پھولوں دلکشی بکھیر رکھی ہے،یوں لگتا ہے قوس قزح کے ساتوں رنگ آسمان سے اتر کر زمیں پر آگئے ہیں ۔ایسے ہم اپنے گھروں کو اس بہار سے کیوں دور رکھیں، نرسریوں میں موسم بہار کے پھولوں کے تیار گملے فروخت ہورہے ہیں،بس تھوڑی سی محنت اور معمولی رقم سے آپ اس بہار

منگل، 18 فروری، 2014

اپنے پیاروں کا دل جیتیئے،خوشنما اشکال کی سبزیوں اور پھلوں سے تواضع کرکے

 موسم گرما کی سبزیوں کی کاشت کا وقت قریب آ گیا ہے ، اس موسم میں کچن گارڈننک کے طور آپ اپنے گھر میں کریلے،بینگن،ٹماٹر،کھیرا،پالک اور دیگر سبزیاں گملوں میں بھی اگا سکتے ہیں جبکہ دھنیا،پودینہ اور سلاد بھی اگایا جا سکتا ہے،آج کی تحریر میں ان سبزیوں کی کاشت کے بارے میں ضروری معلومات فراہم کرنے کا ارداہ تھا مگر ایک محترم بلاگر دوست محمد سلیم نے ایک بڑا ہی دلچسپ لنک دیا ہے جس میں آپ اپنے گھر میں اگائی جانے والی سبزیوں کو اپنی مرضی کی شکل دے سکتے ہیں،اس سلسلہ میں  برطانیہ کی ایک بیج فروخت کرنے والی کمپنی نے اپنے صارفین کے لئے

سوموار، 3 فروری، 2014

اب پودے لگائیے ، گملوں کی بجائے ماحول دوست بیگ میں


پاکستان میں پودوں کو زمین کے علاوہ لگانے کے لئے ابھی تک وہی روائتی گملے ہی استعمال کئے جارہے ہیں جبکہ دنیا میں اب ان روائتی گملوں کی جگہ انواع اقسام کی چیزوں نے لے لی ہے بلکہ یورپ میں گھر کے کاٹھ کباڑ کو  خوبصورت گملوں کی شکل دے کر پودے لگائے جارہے ہیں جن کی وجہ سے گھر کی خوبصورتی میں بھی اضافہ ہوتا ہے۔ ہمارے ہاں ابھی تک وہی گملےاور انہیں ایک ہی طرح سے سجانے کارواج ہے مگر دنیا نے اس سلسلہ میں بہت ترقی کر لی ہے اور پرانے ٹائر،پرانی کرسیاں ،میز،کچن کیبنٹ اور پلاسٹک بیگز استعمال میں لائے جارہے ہیں  بلکہ یورپ میں ہر طرح کی باغبانی کوعلیحدہ علیحدہ کیٹیگری میں تقسیم کر کے اس کی علیحدہ علیحدہ معلومات قارئین تک پہنچائی جاتی ہیں ،اس طرح بیگ گارڈننگ بھی ایک مکمل کیٹیگری ہے جہاں مختلف قسم کی پولیتھین ، پلاسٹک یا کپڑے  کے بنے بیگز میں پودے لگائے جا رہے ہیں اور ان کا استعمال سکھایا جارہا